Home / World / ’آئندہ 6 ماہ میں قانون کے تحت آرمی چیف کے عہدے کی مدت اور نوعیت طے ہوگی‘

’آئندہ 6 ماہ میں قانون کے تحت آرمی چیف کے عہدے کی مدت اور نوعیت طے ہوگی‘

آرمی چیف کے وکیل فروغ نسیم کا کہنا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے عہدے کی نئی مدت آج رات بارہ بجے سے شروع ہوگی  اور چھ ماہ میں ختم نہیں ہوگی ۔ چھ ماہ میں بننے والے قانون کے تحت آرمی چیف کے عہدے کی مدت اور نوعیت طے ہوگی۔

 اٹارنی جنرل انور منصور نے کہا کہ آج کے تاریخی فیصلے سے آئندہ کے لیے رہنمائی ملے گی ، معاون خصوصی شہزاد اکبر نے کہا کہ فیصلے نے واضح کردیا کہ آرٹیکل 243 مکمل طور پر وزیراعظم کا اختیار ہے۔

سپریم کورٹ کے آرمی چیف کی مدت ملازمت کے حوالے سے فیصلے کے بعد اسلام آباد میں اٹارنی جنرل انور منصور خان اور سابق وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم نے پریس کانفرنس کی، اس موقع پر وزیراعظم کے معاونین خصوصی شہزاد اکبر اور فردوس عاشق اعوان بھی موجود تھیں۔

آخری جو نوٹی فکیشن آیا اس کو عدالت نے قبول کیا ہے، اٹارنی جنرل

اٹارنی جنرل انور منصور خان کا کہنا تھا کہ ایک درخواست آئی جس پر حکم امتناع بھی آگیا،حکم امتناع میں چیف آف آرمی اسٹاف کی مدت ملازمت میں توسیع کو معطل کیا گیا۔

آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کی سمری کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ اسی طریقے سے سمری بنائی گئی تھی کوئی نئی چیز شامل نہیں کی گئی تھی۔

انور منصورخان کا کہنا تھا کہ یہ آرمی ایکٹ پری پارٹیشن (تقسیم پاکستان سے قبل)کا ہے، یہ ایکٹ نہ کبھی چیلنج ہوا نہ اس میں کوئی ایسی بات آئی کہ کسی کو احساس ہو کہ غلط کام کیا گیا، 1973 کے آئین کے بعد مختلف چیف آف آرمی اسٹاف تعینات ہوئے اور انہیں توسیع بھی دی گئی۔

اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ آخری جو نوٹی فکیشن آیا اس کو عدالت نے قبول کیا ہے، جب سے فیصلہ آیا ہے میڈیا میں عجیب طریقے سے پیش کیا جارہا ہے، ملک سے باہر ہمارے دشمن اس کا ناجائز فائدہ اٹھا رہے ہیں، پاکستان کے خلاف بات نہ کریں کہ دوسروں کو بھی موقع ملے کہ وہ ہمارے خلاف بات کریں۔

پارلیمنٹ نے طے کرنا ہے کہ 6 ماہ بعد کیا قانون بنانا ہے ،فروغ نسیم

اس موقع پر سابق وزیر قانون اور سپریم کورٹ میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے وکیل بیرسٹر فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ مدت میں توسیع کے لیے اسی طریقہ کار پر عمل کیا گیا جس پر سالہا سال سے ہورہاتھا، جسٹس صاحبان کا شکریہ ادا کرتےہیں کہ انہوں نے رہنمائی کی، آج جمہوریت کی جیت ہوئی ہے آئین اور قانون کی جیت ہوئی ہے۔

بیرسٹر فروغ نسیم کا مزید کہنا تھا کہ 6 ماہ بعد چیف آف آرمی اسٹاف کی توسیع ختم نہیں ہوجائے گی ،6 ماہ تک قانون بنانے کی شرط جوڑ کر توسیع دی گئی ہے، پارلیمنٹ نے طے کرنا ہے کہ 6 ماہ بعد کیا قانون بنانا ہے ،قانون بنے گا تو سب طے ہوجائے گا۔

فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ آرمی چیف کی مدت میں توسیع آج رات 12 بجے کے بعد سے شروع ہے، 6 مہینے میں قانون لائیں گے اس میں جو  بھی مدت رکھی جائے گی وہ پارلیمنٹ کی صوابدید ہے۔

About Editor Tehqiq Nama

Check Also

ملک میں اب پرانا نظام نہیں چل سکتا: وزیراعظم

لاہور: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہےکہ  ہم نے نئے پاکستان میں پرانے مائنڈ سیٹ کو …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے